1. This site uses cookies. By continuing to use this site, you are agreeing to our use of cookies. Learn More.
  2. السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔ اس فورم کا مقصد باہم گفت و شنید کا دروازہ کھول کر مزہبی مخالفت کو احسن طریق سے سلجھانے کی ایک مخلص کوشش ہے ۔ اللہ ہم سب کو ھدایت دے اور تا حیات خاتم النبیین صلی اللہ علیہ وسلم کا تابع بنائے رکھے ۔ آمین
    Dismiss Notice
  3. [IMG]
    Dismiss Notice
  4. السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔ مہربانی فرما کر اخلاق حسنہ کا مظاہرہ فرمائیں۔ اگر ایک فریق دوسرے کو گمراہ سمجھتا ہے تو اس کو احسن طریقے سے سمجھا کر راہ راست پر لانے کی کوشش کرے۔ جزاک اللہ
    Dismiss Notice

درثمین ۔ متفرق اشعار

'درثمین ۔ منظوم کلام حضرت مسیح موعود علیہ السلام' میں موضوعات آغاز کردہ از MindRoasterMir, ‏جون 27, 2018۔

  1. MindRoasterMir

    MindRoasterMir لا غالب الاللہ رکن انتظامیہ منتظم اعلیٰ معاون مستقل رکن

    متفرق اشعار

    نہیں محصور ہر گز راستہ قدرت نمائی کا
    خدا کی قدرتوں کا حصر دعوٰی ہے خدائی کا

    براہین احمدیہ حصہ چہارم صفحہ401مطبوعہ 1884ء


    قدرت سے اپنی ذات کا دیتا ہے حق ثبوت
    اس بے نشاں کی چہرہ نمائی یہی تو ہے

    جس بات کو کہے کہ کروں گا یہ میں ضرور
    ٹلتی نہیں وہ بات خدائی یہی تو ہے

    اعلان مطبوعہ ریاض ہند امرتسر 22مارچ 1886ء


    جس نے پیدا کیا وہی جانے
    دوسرا کیونکر اُس کو پہچانے

    غیر کو غیر کی خبر کیا ہو
    نظَر دور کارگر کیا ہو

    سرمہ چشم آریہ صفحہ184مطبوعہ 1886ء


    جو ہمارا تھا وہ اب دلبر کا سارا ہو گیا
    آج ہم دلبر کے اور دلبر ہمارا ہو گیا

    شکر للہ مل گیا ہم کو وہ لعلِ بے بَدَل
    کیا ہوا گر قوم کا دل سنگ خارا ہو گیا

    ہم نے اُلفت میں تری بار اُٹھایا کیا کیا
    تجھ کو دکھلا کے فلک نے ہے دکھایا کیا کیا

    ازالہء اوہام حصہ دوم صفحہ665مطبوعہ 1891ء


    پیش گوئی کا جب انجام ہوَیدا ہو گا!
    قُدرتِ حق کا عجب ایک تماشا ہو گا

    جھوٹ اور سچ میں جو ہے فرق وہ پیدا ہو گا
    کوئی پا جائے گا عزت کوئی رسوا ہو گا

    آئینہ کمالات اسلام صفحہ281مطبوعہ 1893ء


    لوگوں کے بغضوں سے اور کینوں سے کیا ہوتا ہے
    جس کا کوئی بھی نہیں اُس کا خدا ہوتا ہے

    بے خدا کوئی بھی ساتھی نہیں تکلیف کے وقت
    اپنا سایہ بھی اندھیرے میں جُدا ہوتا ہے

    حاشیہ اشتہار مع معیار الاخیاروالاشرارمطبوعہ17مارچ 1894ء


    جس کی تعلیم یہ خیانت ہے
    ایسے دیں پر ہزار *** ہے

    آریہ دھرم صفحہ45مطبوعہ 1895ء


    دوستو اِک نظر خدا کے لئے
    سیّد الخَلق مصطفیؐ کے لئے

    اشتہار مستیقنًا لوحی اللہ القھار14جنوری 1897ء


    کوئی جو مُردوں کے عالم میں جاوے
    وہ خود ہو مُردہ تب وہ راہ پاوے

    کہو زندوں کا مُردوں سے ہے کیا جوڑ
    یہ کیونکر ہو کوئی ہم کو بتاوے

    ایام الصلح صفحہ143مطبوعہ 1899ء


    مر گیا بد بخت اپنے دار سے
    کٹ گیا سر اپنی ہی تلوار سے

    کھل گئی ساری حقیقت سَیف کی
    کم کرو اب ناز اِس مردار سے

    نزول المسیح صفحہ224مطبوعہ 1909ء


    کیسے کافِر ہیں مانتے ہی نہیں
    ہم نے سَو سَو طرح سے سمجھایا

    اِس غرض سے کہ زندہ یہ ہوویں
    ہم نے مرنا بھی دل میں ٹھہرایا

    بھر گیا باغ اب تو پھولوں سے
    آؤ بُلبل چلیں کہ وقت آیا

    رسالہ تشحیذ الاذہان ماہ دسمبر 1909ء


    جب سے اے یار تجھے یار بنایا ہم نے
    ہر نئے روز نیا نام رکھایا ہم نے

    کیوں کوئی خَلق کے طعنوں کی ہمیں دے دھمکی
    یہ تو سب نقش دل اپنے سے مٹایا ہم نے

    از مسودات حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام


    اگر وہ جاں کو طلب کرتے ہیں تو جاں ہی سہی
    بلا سے کچھ تو نپٹ جائے فیصلہ دِل کا

    اگر ہزار بلا ہو تو دِل نہیں ڈرتا
    ذرا تو دیکھئے کیسا ہے حوصلہ دِل کا

    اخبار الفضل 31دسمبر 1913ء


    وقت تھا وقتِ مسیحا نہ کسی اور کا وقت
    میں نہ آتا تو کوئی اَور ہی آیا ہوتا


    از مسودات حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام


    الہامی اشعار

    کیا شک ہے ماننے میں تمہیں اِس مسیح کے
    جس کی مماثلت کو خدا نے بتا دیا

    حاذِق طبیب پاتے ہیں تم سے یہی خطاب
    خوبوں کو بھی تو تم نے مسیحا بنا دیا

    قادِر کے کاروبار نمودار ہو گئے
    کافِر جو کہتے تھے وہ گرفتار ہو گئے

    کافر جو کہتے تھے وہ نگوں سار ہو گئے
    جتنے تھے سب کے سب ہی گرفتار ہو گئے

    ضمیمہ تحفہ گولڑویہ حاشیہ صفحہ 27مطبوعہ 1902ء

    دُشمن کا بھی خوب وار نکلا
    تِس پر بھی وہ آر پار نکلا

    الحکم 30اکتوبر 1902ء

    قادر ہے وہ بارگہ۔ ٹُوٹا کام بناوے
    بنا بنایا توڑ دے کوئی اُس کا بھید نہ پاوے

    اخبار بدر 22نومبر 1906ء

    بر تر گمان و وہم سے احمد کی شان ہے
    اس کا غلام دیکھو مسیح الزمان ہے

    حقیقۃ الوحی صفحہ 274کا حاشیہ مطبوعہ 1907ء

    کروں گا دُور اُس ماہ سے اندھیرا
    دکھاؤں گا کہ اک عالم کو پھیرا

    تذکرہ صفحہ 427

    چل رہی ہے نسیم رحمت کی
    جو دعا کیجئے قبول ہے آج

    تذکرہ صفحہ 206


    الہامی مصرعے

    ہے سر راہ پر تمھارے وہ جو ہے مولیٰ کریم

    اخبار بدر 20اپریل 1905ء

    پھر بہار آئی خدا کی بات پھر پوری ہوئی

    اخبار بدر11مئی 1905ء

    کشَتیاں چلتی ہیں تا ہوں کُشتیاں

    اخبار بدر 17مئی 1906ء

    پھر بہار آئی تو آئے ثلج کے آنے کے دن

    اخبار بدر 10مئی 1906ء

    پاک محمد مصطفٰے نبیوں کا سردار

    براہین احمدیہ چہار حصص صفحہ 522

    جے توں میرا ہو رہیں سب جگ تیرا ہو

    اخبار بدر 25اپریل 1908ء

    شعق الہٰی وسے منہ پر ولیاں ایہہ نشانی

    اخبار بدر 08مئی 1903ء

    جدھر دیکھتا ہوں ادھر تو ہی تو ہے

    اخبار بدر 16اپریل 1904ء

    پر خدا کا رحم ہےکوئی بھی اس سےڈرا نہیں

    اخبار بدر 11مئی 1905ء

    اگر یہ جڑ رہی سب کچھ رہا ہے

    اخبار الحکم 31اگست 1901ء

    بڑھیں گےجیسے باغوں میں ہوں شمشاد

    مطبوعہ 1901ءمنقول از بشیر احمد،شریف احمد اور مبارکہ کی آمین

    چمک دکھلاؤں گا تم کو اس نشاں کی پنج بار

    تجلیات الہیہ صفحہ 1حقیقۃ الوحی صفحہ 93حاشیہ

    زار بھی ہو گا تو ہوگا س گھڑی با حال زار


    براہین احمدیہ حصہ پنجم صفحہ 120ء


    قطعہ تاریخ براہین احمدیہ

    کیا خوب ہے یہ کتاب سبحان اللہ
    اک دم میں کرے ہے دین حق سے آگاہ

    ازبس کہ یہ مغفرت کی بتلاتی ہے راہ
    تاریخ بھی یا غفور 1297نکلی واہ واہ
    ٹائیٹل پیج براہین احمدیہ

    [​IMG]
     

اس صفحے کو مشتہر کریں