1. This site uses cookies. By continuing to use this site, you are agreeing to our use of cookies. Learn More.
  2. السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔ اس فورم کا مقصد باہم گفت و شنید کا دروازہ کھول کر مزہبی مخالفت کو احسن طریق سے سلجھانے کی ایک مخلص کوشش ہے ۔ اللہ ہم سب کو ھدایت دے اور تا حیات خاتم النبیین صلی اللہ علیہ وسلم کا تابع بنائے رکھے ۔ آمین
    Dismiss Notice
  3. [IMG]
    Dismiss Notice
  4. السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔ مہربانی فرما کر اخلاق حسنہ کا مظاہرہ فرمائیں۔ اگر ایک فریق دوسرے کو گمراہ سمجھتا ہے تو اس کو احسن طریقے سے سمجھا کر راہ راست پر لانے کی کوشش کرے۔ جزاک اللہ
    Dismiss Notice

درثمین ۔ جوشِ صداقت ۔ کیوں نہیں لوگو تمھیں حق کا خیال

'درثمین ۔ منظوم کلام حضرت مسیح موعود علیہ السلام' میں موضوعات آغاز کردہ از MindRoasterMir, ‏جون 27, 2018۔

  1. MindRoasterMir

    MindRoasterMir لا غالب الاللہ رکن انتظامیہ منتظم اعلیٰ معاون مستقل رکن

    جوشِ صداقت

    کیوں نہیں لوگو تمھیں حق کا خیال
    دِل میں آتا ہے مِرے سَو سَو اُبال

    آنکھ تر ہے دِل میں میرے درد ہے
    کیوں دِلوں پر اِس قدر یہ گرد ہے

    دِل ہوا جاتا ہے ہردم بے قرار
    کِس بیاباں میں نکالوں یہ غبار

    ہوگئے ہم درد سے زیر و زبر
    مَر گئے ہم پر نہیں تم کو خبر

    آسماں پر غافلو اِک جوش ہے
    کچھ تو دیکھو گر تمھیں کچھ ہوش ہے

    ہوگیا دیں کفر کے حملوں سے چُور
    چُپ رہے کب تک خداوندِ غیور

    اِس صدی کا بیسواں اب سال ہے
    شرک و بدعت سے جہاں پامال ہے

    بدگماں کیوں ہو خدا کچھ یاد ہے
    افترا کی کب تلک بنیاد ہے

    وہ خدا میرا جو ہے جو ہر شناس
    اِک جہاں کو لارہا ہے میرے پاس

    *** ہوتا ہے مَردِ مُفتری
    *** کو کب ملے یہ سروری

    اعجاز احمدی صفحہ32مطبوعہ 1902ء


    [​IMG]
     

اس صفحے کو مشتہر کریں