مکتبہ احمدیہ فہرست مضامین

احمدیت بجواب قادیانیت

صفحہ الف

مولوی ابو الحسن ندوی کی کتاب قادیانیت کا جواب احمدیت مصنفه جناب قاضی محمد نزیر صاحب فاضل ناظر اشاعت لٹریجر وتصنيف

صفحہ ب

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم نحمدہ و نصلی علی رسولہ الکریم ۔ وعلی عبدہ المسیح الموعود احمدیت مصنفه جناب قاضی محمد نزیر صاحب فاضل ناظر اشاعت لٹریجر وتصنيف بجواب قادیانیت مصنفہ مولوی ابو الحسن صاحب ندوی

صفحہ ب

مصنف کی دیگر کتب 1۔ الحق المبين في تفسيرخاتم النبيين ۔ مولوی محمد شفیع صاحب دیوبندی کی کتاب خاتم النبیین کا جواب 2۔ حقیق عارفانہ. پروفیسرغلام جیلانی برق کی کتاب حرف محرمانہ کا جواب 3۔ تبصرہ ملک جعفر خان ایڈووکیٹ کی کتاب احمدیہ تحریک کا جواب 4۔ شان خاتم النبیین 5۔ مقام خاتم النبیین 6۔ علمی تبصرہ ۔ مولوی مودودی صاحب کے رسالہ ختم نبوت کا جواب 7۔ احمدیہ تعلیمی پاکٹ بک 8۔ شان مسیح موعودعلیہ السلام

صفحہ ج

فہرست مضا مین

عنوان صفحہ
پیش لفظ ک
مولوی ابو الحسن ندوی کی کتاب کا مقصد احمدیت کو اسلام کے خلاف ایک متوازی دین ثابت کرنا ہے 4
اس کی تردیدمیں حضرت مسیح موعودعلیہ السلام کی تحریریں 5
خاتم النبین کے کئی معنوی پراجماع ہے؟ 17
مولوی ابو الحسن صاحب ندوی کا افتر کہ مرزا صاحب نبی مستقل صاحب شریعت ہونے کے قائل تھے 20
| اربعین کی عبادت کی تشریح 25
شریعت کے احکام پر مشتمل بزرگان دین کوبھی ہوئے (اس کی مثالیں) 27
جہاد کی منسوخی کا الزام 30
الزام کی تردید 32
غیر از جماعت لوگو ں سے معا ملات بھی کسی جدید شریعت کی بناپر نہیں 35
فتوی کفرمیں ابتداء غیر احمد ی علماء کی طرف سے ہوئی اور بلا وجہ ہوئی 36
. جماعت احمدیہ مکفر مسلمانوں کو غیرمسلم نہیں مانتی 42
مسیح موعود کے منکروں کوکا فر قسم دوم قراردینے سے شریعت جدیدہ کا دعویٰ لازم نہیں آتا 47
حضرت مسیح موعود علیہ السلام نے مسیح موعود ہونے کا دعویٰ کسی کے مشورہ سے نہیں کیا 50
ندوی صاحب کی تضاد بیانی 58
مسیح موعود ہونے کا دعوی کتاب فتح اسلام سے پہلے کیا گیا تھا 61
مسیح موعود ہونے کا دعویٰ حکومت کے اشارہ سے نہ تھا 66

صفحہ د

حقیقت بروز 69
تناسخ کے الزام کا رد ۔ مولوی ابو الحسن کے پیش کردہ حوالہ جات کی تشريع 77
آنحضرت صلی الله علیہ وسلم کے دو بعث ، اور خطبہ الہامیہ کے حوالجات کی تشریح 84
مولوی ندوی صاحب کاحضرت مسیح موعود علیہ السلام کے کردار پر حملہ 92
گورنمنٹ انگریزی کی حمایت اور جہاد کوحرام قرار دینے کےالزام کا رد اورانگریزی حکومت کی حمایت کی وجہ 103
انگریزوں کا پنجاب کے مسلمانوں کو سکھوں کے مظالم سے نجات دلانا 110
حضرت بانی سلسلہ احمدیہ کی سیاست دانی 112
پاکستان بنانے میں حضرت امام جماعت احمدیہ کا کردار 113
مولوی محمد حسین صاحب بٹالوی کی دو رخی 115
جاسوسی کے الزام کارد 119
درشت کلامی اور دشنام طرازی کے الزامات 121
الجواب حضرت بانی سلسہ احمدیہ کی طرف سے سخت کلامی کی وجوہ 123
علماء کے حضرت مسیح موعود علیہ السلام کے خلاف سخت الفاظ 125
الف۔ مولوی محمد حسین صاحب بٹالوی کی سخت کلامی 125
ب۔ مولوی نذیر حسین دہلوی کی سخت کلامی 126
ج ۔ مولوی عبدالجبار غزنوی کی سخت کلامی 127
د۔ مولوی عبد الصمد غزنوی کی سخت کلامی 127
ہ۔ مولوی عبد الحق غزنوی کی سخت کلامی 127
و۔ مولوی سعد اللہ لدھیانوی کی سخت کلامی 128
مولوی ابو الحسن کا افتراء اور ذریۃ البغایا کے حقیقی معنی 132

صفحہ ہ

مسیح موعود کے شعروں کی تشریح 137
پیشگوئی متعلق مرزا احمد بیگ ومحمدی بیگم 143
الہام الحق من ربک کی تشریح 159
پیشگوئی کو پورا کر نے کے لئے جد وجہد ر وا ہے 162
مولوی ابو الحسن کے تنقیدی جائزہ پر ہماری تنقید 169
احمدیت کے مستقل مذہب اور متوازی امت ہونے کی تر دید 170
قادیان مرکز اسلام اور ابو الحسن صاحب کے اعتراض کا جواب 184
ایک ہندو ڈاکڑ کے خیالات سے مولوی ابوالحسن صاحب کا استدلال 189
الجواب 192
نبوت محمدی کے خلاف بغاوت کے الزام کارد 197
مولوی ابو الحسن ندوی کا نیا فلسفہ متعلق خاتم النبیین 208
آسانی سہارے کی ہمیشہ ضرورت ہے 216
ختم نبوت کے متعلق ڈاکٹراقبال کا فلسفہ اور اس کا رد 217
احمدیت اور بہایت میں فرق 221
ختم نبوت تفسیراز امام علی القاری رحمۃ اللہ علیہ 221
سراقبال کے مضمون پر اخبار سیاست کا ناقدانہ تبصره 230
روزرنا مستحق لکھنو کا تبصرہ 234
سراقبال کا ایک سوال 235
الجواب 236
مسیح موعوود علیہ السلام منعم علیہ گردہ کی آخری اینٹ کا مفہوم 242

صفحہ ۔۔و۔۔

مسیح موعود علیہ السلام کے نزدیک آئیندہ انبیا ء کا امکان 243
مولوی ابو الحسن صاحب کے ایک نوٹ سے انکے اس خیال کی تردید کہ بانی احمدیت علیہ السلام آخری نبی ہونے کے مدعی تھے 245
حضرت مسیح موعود علیہ السلام کے ایک اقتباس متعلق مکالمہ و مخاطبہ پر مولوی ابو الحسن کا اعتراض 247
اس اعتراض کا جواب 249
بنی اسرائیل کی عورتوں پر وحی کا نزول 251
بزرگوں کے اقوال سے امت میں وحی جاری رہنے کا ثبوت 252
الہامات صحابہ کرام رضی الٹنہم 254
مزیت اسلامی کے ماخذ اوتفسیرناتم نیتن 261
سیاق آیت سے خاتم النبیین کی تفسیر 262
مولوی محمد قاسم صاحب نانوتری کی غیر 263
امام عل الفار کے نزدیفات بیان کے معنی آخری شریعی در تقلانی 266
احادیث نبوی امت میں مکان نبوت کا بھوت 267
ام المؤمنین حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کے قول سے امکان نبوت کا ثبوت 268
شیخ اکبر محی الدین ابن عربی علیہ الرحمۃ کے اقوال ایک قسم کی نبوت جاری رہنے کے متعلق 269
شیخ اکبر علیہ الرحمۃ کے نزدیک مسیح موعود علیہ السلام نبوت مطلقہ کا حامل ہوگا 271
امام عبدالوہاب شعران علیہ الرحمۃ کے نزدیک نبوت مطلقہ بند نہیں ہوئی صرف تشریعی نبوت منقطع ہوئی ہے۔ 272
حضرت عبدالکریم جیلانی رحمۃ اللہ علیہ کے نزدیک صرف تشریعی نبوت منقطع ہوئی ہے 272
شیخ اکبر حضرت محی الدین ابن عربی علیہ الرحمت کے نزدی حدیث لانبی بعدی ولارسول بعدی کی تشریح کہ مقام نبوت منقطع نہیں ہوا صرف تشریعی نبوت منقطع ہوئی ہے 272
امام شعرانی علیہ الر حمۃ کے نزدیک ایسی ہی تشریح 274

صفحہ ۔۔ ز۔۔

حضرت مولانا جلال الدین رومی کے نزدیک خاتم النبیین کے یہ معنی کہ آپ ﷺ کے فیض سے نبوت جاری ہے 274
حضرت شاہ ولی صاحب علیہ الرحمۃ کے نزدیک صرف تشریعی نبوت منقطع ہوئی 275
مولوی عبدالحی صاحب لکھنوی کے نز دیک مجرد کسی نبی کا آنا محال نہیں 276
مصنف غایت ا لبرہان کا قول کہ صرف تشریعی نبوت منقطع ہے 276
اما مرراغب کا قول کہ امت میں امکان نبوت ہے۔ 276
مکالمات الٰہیہ اسلام کے زندہ ہونے کا ثبوت 277
. مولوی ابوالحسن صاحب کی سلسلہ نبوت میں تشکیک 279
مولوی ابوالحسن صاحب کے متضا دخیالات نبی کی آمد کے متعلق 280
. مكالمات الہیہ کے سرچشمہ کی تعین 283
مولوی ابو الحسن صاحب سے ایک ضروری سوال ( انبیاء کی وحی کے بارہ میں ان کی تشکیک پیدا کرنے سے متعلق ) 285
محکوم کے الہام کے متعلق ڈاکٹراقبال کا شاعرانہ خیال 287
مولوی اسلم صاحب جیراج پوری کی اس پر نکتہ چینی 288
الہامات کو پرکھنے کے قرآن معیار 288
ڈاکڑ ا قبال وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 294
مولوی ابو الكلام وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 294
نواب اعظم یار جنگ وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 295
مولوی عبیداللہ سندھی وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 295
سرسید احمد خان وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 296
علمائے عرب میں سے علامہ رشید رضا وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 296
علامہ مفتی محمدعبده وفات مسیح علیہ السلام کے قائل تھے 297

صفحہ ۔۔۔ ح۔۔۔

الاستاذ محمود شلتوت مفتی مصروفات مسیح علیہ السللام کے قائل تھے 297
علا مہ الاستاذ احمد العجوز وفات مسیح علیہ السللام کے قائل تھے 299
الاستاذ علامہ المراغی و فات مسیح علیہ السللام کے قائل تھے 299
مسیح علیہ السللام کے نزول کی پیشگوئیوں کے بارہ میں صحیح مسلک 300
مسیح موعود کا مطمع نظر ساری دنیامیں اسلام کو غالب کرنا ہے 302
انگریزوں کا اقتدار ختم کرنے میں جماعت احمدیہ کا کردار 304
ڈاکٹر اقبال صاحب کی انگریزوں کی مدح خوانی 305
مسیح موعود علیہ السللام کی سترہ 17 پیشگوئیاں ایک غیر جانبدار محقق کے قل سے جو مسیح موعود علیہ السلام کے منجانب اللہ ہونے کا ثبوت ہے 311
مولوی ابو الحسن کی بانی احمدیت کی وفات کے متعلق غلط بیانی 327
مولوی ابو الحسن صاحب کی حق پوشی 329
تنقیدی جائزہ (فصل سوم ۔ ہم میں اور لاہوری فرقی میں نزاع لفظی ہے) 333
دونوںفریق کے نزدیک مسیح موعود علیہ السلام تشریعی اور مستقل نبی 337
دونون فريق تناسخ والےحلول کے قائل نہیں بروز کے قائل ہیں۔ 338
مولوی ابو الحسن صاحب کی مولوی محمد علی صاحب کی تفسیر پر نقطہ چینی اور ہماری تنقید 339
1۔ موسٰی کا پتھر پر لاٹھی مارنا 341
2۔ اذا قتلتم نفسا میں نفس سے مراد 342
3۔ حضرت مسیح علیہ السلام کے پر ندے بنانے کی حقیقت 343
4۔ منطق الطیر کی حقیقت 347
5۔ حضرت سلیمان کے جن اور لشکری کون تھے؟ 349
6۔ حضرت سلیمان کی موت اور دابۃ الا رض کی حقیقت 361

صفحہ ۔۔۔ ط۔۔۔

احمدیت نے اسلام کو کیا دیا؟ 375
مولوی ابو الحسن کے نزدیک عالم اسلامی کی حالت اور روحانی شخصیت کی ضرورت کا احساس 376
مولوی ابوالحسن صاحب کی ناشکرگزاری 381
حضرت مسیح موعو دعلیہ السلام کے تبلیغی کارنامے 383
ابراہین احمدیہ اور اس پر ریویو 383
لیکچر اسلامی اصول کی فلاسفی اور اس کے غالب رہنے کی پیشگوئی اور اس کا اثر 385
کتاب جنگ مقدس و نورالحق (عیسائیوں سے مناظره و انعامی چیلنج) 392
سرالخلافة (مسئلہ خلافت پر بحث) 392
منن الرحمن (عربی زبان کے ام الالسنہ ہونے کا ثبوت) 393
معيارالمذاهب . فطرتی معیار کے لحاظ سے مقابل مذاہب 394
آریہ دھرم ۔ آریہ مذھب کے رد میں 394
ست بچن - بابا نانک کا اسلام 395
سراج منیر۔ سینتیس 37 پیش گوئیاں . 395
برکات الدعاء - دعا کا فلسفہ 395
حجت الاسلام - رد عیسائیت 397
آئینہ کمالات اسلام - معارف قرآنی پرمشتمل 397
چشمہء معرفت ۔ اسلام کی حقانیت کے ثبوت اورآریوں کے اعتراضا ت کے ر د میں 397
مسیح موعود علیہ السلام کے ذریعہ مسلمانوں کی اصلاح 399
تحریک احمدیت کا مقصد 402

صفحہ ۔۔۔ی۔۔۔

الف . نشرواشاعت کا کام 403
ب ۔ تبلیغی مراکز 403
ج ۔ تراجم قران 404
د۔ مساجد کی تعمی 405
ہ۔ تعلیمی ادارے 405
و۔ اخبارات 406
ز۔ طبی مراکز 406
جماعت احمدی کی تین خوبیاں 407
انسائیکلو پیڈیا برٹینیکا کے ریماکس 409
انسائیکلو پیڈیا آف اسلام (لائڈن) کے ریمارکس 410
مجلة الازہر قاہرہ کے ریمارکس 410
ہماری زبان۔ علی گڑھ کے ریمارکس 410
صدوق جدید لکھنؤ کے ریمارکس 411
تحریک شدھی 412
مولانا عبدالرحیم صاحب شر رکے ریمارکس 414
مولانا محمد علی صاحب جوہر کے ریمارکس 415
شاعر مشرق علامہ اقبال اور علامہ نیاز فتح پوری کے ریمارکس 416
جناب اشفاق حسین مراد آبادی کا تاثر 417
جماعت احمدیہ اور عیسائی دنیا کا تاثر 418
جماعت کے روشن مستقبل کے متعلق حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی پیشگوئیاں 422

صفحہ ۔۔۔ک۔۔۔

پیش لفظ

قادیانیت“ مصنف مولوی ابوالحسن صاحب ندوی کے جواب میں ثابت کیاگیا ہے کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا اصالتا نازل ہونا ختم نبوت کے منا فی ہے ۔ کیونکہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام مستقل نبی تھے اور کسی مستقل نبی کا آنحضرت ﷺ کے بعد آجانا آیت خاتم النبیین کے منافی ہے۔ مولوی ابو الحسن صاحب ندوی نے اپنی کتاب میں اپنا عقیدہ ظاہر کیا ہے کر آنحضرت ﷺ خاتم النبیین ہونے کی وجہ سے مستقل آخری نبی ہیں لہٰذا اگر ان کے بعد کوئی نبی آجائے تو وہ خاتم النبیین بن جاتا ہے اور یہ محال ہے ۔ مولوی صاحب کے ان دو عقیدوں میں صریح تضا داور تناقض پایاجاتا ہے۔ اب اگروه یہ نظریہ اختیار کریں کہ مسیح موعود نبی اللہ ہوگا اور آنحضرت ﷺ کا امتی بھی تو ان کو خاتم النبیین کے بعد ایک نئی قسم کے نبی کاآنا مسلم ہو گا جسے وہ خاتم البنیین کے خلاف نہیں سمجھیں گے لہٰذا خاتم البنیین کے معنی جو وہ آخری نبی کرتے ہیں غلط قرار پائیں گے لہٰذا خاتم النبیین کے معنی جو وہ مطلق آخری نبی کرتے ہیں غلط قرار پائیں گے اور انکی اس توجیہ کے لحاظ سے خاتم النبیین کا مفہوم یہ بن جائے گا کہ آنحضرت ﷺ آخری تشریعی اور مستقل نبی ہیں جن کی شریعت کا عمل قیامت تک رہے گا ۔ ان معنوں میں ختم نبوت مسیح کے امتی نبی کی حیثیت سے آنے کی مانع نہیں ہوگی اسی طرح انہیں ختم نبوت کے ان معنوں میں ہم سے اتفاق کرناپڑے گا۔

رسول کریم ﷺ نے نجران کے عیسائیوں سے جو صلیبی عقیدہ کے قائل تھے سے یہ سوال کیا جب کہ بحث مسیح کے ولد اللہ ہونے کا متعلق چل رہی تھی الستم تعلمون ان ربنا حی لایموت و ان عیسیٰ اتیٰ علیہ الفناء ۔ قالوا بلا ۔ کہ کیا تم نہیں جانتے ہمارا رب زندہ ہے اور وہ

1۔ اسباب النزول تالیف ابو الحسن علی بن احمد الواحدی النیساپوری ۔ 468 ہجری مطبوعہ مصر ص 53